فلکیات »

January 9, 2013 – 3:49 am | ترمیم

عذاب ِیوم کے دن کی طوالت پچاس ہزار سال ۔ جدید سائنس کی روشنی میں

ستاروں کے چال چلن سے لوگ مستقبل کا حال بتاتے ہیں ۔ طرح طرح کے دل دہلانے والے انکشافات …

مزید پڑھیے »
ہم مسلمان کیسے ہوئے؟

کن سائنسی تحقیقات کے نتائج نے ہمیں اسلام کے متعلق سوچنے پر مجبور کیا اور پھر ہم مسلمان ہو گئے

صحت وتندرستی

انسانی صحت کے متعلقہ انٹرنیٹ پٔر شائع ہونے والے مفید مضامین پڑھیے

سائنسی خبریں

سائنسی شعبہ میں ہونے والی جدید ترین تحقیقات و انکشافات پر مشتمل مضامین پڑھیے

موسمیات

ہوا ، بادل ،پانی اور بارش کا آپس میں کیا تعلق ہے ؟ اللہ کی قدرت ان میں کیسے جلوہ گر ہے .

تمہید و ابتدائیہ

قرآن مجید کس طرح جمع ہوا ، کیا اسلام اور سائنس میں تضاد ہے ، وغیرہ مضامین کو شامل کیا گیا ہے۔

صفحہ اول » سائنسی خبریں

21دسمبر2012 کوقیامت نہیں آئے گی،ناسا

کاتب نے – January 6, 2012 – کو شائع کیا 3 تبصرے

21دسمبر2012 کوقیامت نہیں آئے گی،ناسا

 امریکی خلائی تحقیق کے ادارے  ناسا کا کہنا ہے کہ رواں سال21 دسمبر 2012ء کونبرونامی کوئی سیارہ زمین سے نہیں ٹکرائے گا اور نہ ہی قیامت آئے گی۔

ناسا کے مینجر ڈان یومنیزکے مطابق  نام نہاد سائنسدان کہتے ہیں کہ نبرو نامی سیارہ زمین سے ٹکرائے گا مگر اس نام کا کوئی سیارہ وجود ہی نہیں رکھتا اور اگر مان لیا جائے کہ وہ 21 دسمبر 2012 ء کو ٹکرائے گا تو اسے اب  تک نظر آجانا چاہیے۔

 ان کا کہناتھا کہ بعض سائنسدان کہتے ہیں کہ ہمارا سورج کہکشاں کے پاس  سے 21 دسمبر کو گزرےگا لیکن حقیقت یہ ہے ہمارا سورج کہکشاں سے 67 نوری سال کے فاصلے پرہے جہاں پہنچنے میں اسے پہنچنے میں کئی لاکھ سال لگیں گے جب کہ زمین پر صرف سورج اور چاند ہی اپنی کشش ثقل کے حوالے سے اثرانداز ہوسکتے ہیں۔

ڈان یومنیز کا کہناتھا کہ زمین سے خلائی تودوں کے ٹکرانے کا ہر وقت امکان موجود رہتاہےمگر ان معمولی احبام سے زمین کو کوئی خطرہ لاحق نہیں دراصل آج سے ساڑھے 6 کروڑ سال پہلے ایک بہت بڑا خلائی تودہ زمین سے ٹکرایا تھا جس  نے ڈائناسار کا دور ختم ہوگیا تھا۔

ناسا سائنسدانوں کا کہنا ہےکہ  لوگوں کے خدشات اس وقت تک ختم نہیں ہوں گے جب تک نام نہاد سائنسدانوں کےمقابلے میں  حقیقی سائنسدان میدان میں نہیں آتے۔

واضح رہے کہ مایا کلینڈرپرایمان رکھنےوالے لوگوں کا  یقین ہےکہ 21 دسمبر2012ء کو  قیامت آجائے گی جس کے بعد دنیا کا خاتمہ ہوجائےگا لیکن ماہرین علم نجوم اور فلکیات کا کہنا ہے کہ ایسا کچھ نہیں ہوگا اس لیے پریشان ہونے کی ضرورت نہیں۔

مایاکلینڈر کے حامیوں کا کہنا کہ 21 دسمبر 2012 ء کے روز 1,44,000دنوں کا دورانیہ ختم ہوجائےگا جس کے بعد اسی روز زمین سے سیارہ ٹکرائےگا اور تباہی پھیل جائےگی۔

ماخذ

پوسٹ کے متعلق اپنی رائے سے آگاہ کیجئے

ٹیگز: , , , , ,

تبصروں کی تعداد: 3. »

  • waqas says:

    As a true Muslim we should follow the right path to the Haven by doing good deeds according to the message of ALLAH and the Last Prophet Muhammad (S.A.A.W) and should not worry about the Doomsday. When the time comes Doomsday will arrive but no one knows when it will come. Only ALLAH knows about the Doomsday.

  • bushra tasneem says:

    قیامت کب ہو گی؟ اس بات کا علم کسی کو نھیں ہے۔یہ مومن کا ایمان ہے۔اس قسم کی معلومات پہ یقین کرنا مومن کے ایمان کو مشکوک بنانے کے مترادف ہے۔مومن کو اپنے عمل صالح کی فکر کرنی چاہیے نہ کہ مہلت وقت جمع تفریق کر نے میں گزار دے۔اللہ تعالی امت مسلمہ کو ہوشمندی کی توفیق عطا فرماے۔اپ نے بھت اچھا تجزیہ کیا ہے ۔

  • Osama Abdul Hafeez Khan Abbasi says:

    yeh sab tu kehne ki bate huti he duniya me koi bhi nai janta k qayamat kab aye gi yeh tu allah ki taraf se he usi ne yeh duniya banai he or wohi is duniya ko fani kare ga hame usi ki taraf lot k hjana he tu hamri behtri isi me he k ham in sab batoo ko choor kr allah ki rah me lagje allah ko razi karne me lag jae or apni akhirat saware allah sham sab ko hidayat de or quran o hadies pe amal karne ki tofiq ada farmae ameen

تبصرہ لکھيں!

آپ کا يہاں تبصرہ کرنا ممکن ہے، يا پھر آپ اپنی سائٹ سے ٹٹریک بیک کریں اپنی سائیٹ سے. آپ کرسکتے ہیں Comments Feed بذریعہ ار ایس ایس.

اس موضوع پر تبصرہ فرمائيں اور سپام سے اسے محفوظ رکھيں آپ کے ہم نہايت شکر گزار ہيں...

آپ درج ذيل ٹيگز استعمال کرسکتے ہيں

<a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong> 

یہ ایک گریویٹار اینیبلڈ ویب سائیٹ ہے۔ اپنا عالمی سطح پرتسلیم شدہ اوتار حاصل کرنے کے لیے رجسٹر کریں گریوٹار.