فلکیات »

January 9, 2013 – 3:49 am | ترمیم

عذاب ِیوم کے دن کی طوالت پچاس ہزار سال ۔ جدید سائنس کی روشنی میں

ستاروں کے چال چلن سے لوگ مستقبل کا حال بتاتے ہیں ۔ طرح طرح کے دل دہلانے والے انکشافات …

مزید پڑھیے »
ہم مسلمان کیسے ہوئے؟

کن سائنسی تحقیقات کے نتائج نے ہمیں اسلام کے متعلق سوچنے پر مجبور کیا اور پھر ہم مسلمان ہو گئے

صحت وتندرستی

انسانی صحت کے متعلقہ انٹرنیٹ پٔر شائع ہونے والے مفید مضامین پڑھیے

سائنسی خبریں

سائنسی شعبہ میں ہونے والی جدید ترین تحقیقات و انکشافات پر مشتمل مضامین پڑھیے

موسمیات

ہوا ، بادل ،پانی اور بارش کا آپس میں کیا تعلق ہے ؟ اللہ کی قدرت ان میں کیسے جلوہ گر ہے .

تمہید و ابتدائیہ

قرآن مجید کس طرح جمع ہوا ، کیا اسلام اور سائنس میں تضاد ہے ، وغیرہ مضامین کو شامل کیا گیا ہے۔

صفحہ اول » سائنسی خبریں

چین دنیا کی سب سے بڑی خلائی دوربین بنانے میں مصروف

کاتب نے – July 26, 2015 – کو شائع کیا

چین دنیا کی سب سے بڑی خلائی دوربین بنانے میں مصروف

ناسا نے حال ہی میں ایک سیارہ دریافت کیا، جسے ’زمین نمبر دو‘ قرار دیا جا رہا ہے۔ یہ سیارہ بالکل زمین جیسا ہے اور کہا جا رہا ہے۔اس سیارے پر ممکنہ زندگی کا سراغ لگانے کے لیے چین دنیا کی سب سے بڑی دوربین بنانے میں مصروف ہے۔

ناسا کی خلائی دوربین کیلپر نے حال ہی میں سیارہ 452B دریافت کیا ہے، جسے زمین سے بے پناہ مماثلت کی وجہ سے "Earth 2.0" کا نام دیا گیا ہے۔ یہ سیارہ زمین سے 14 سو نوری سال کے فاصلے پر ہے، یعنی اگر روشنی کی رفتار سے سفر کیا جائے، تو بھی اس سیارے تک پہنچنے میں 14 سو برس درکار ہوں گے۔0,,18605096_303,00

چین نے اعلان کیا ہے کہ وہ دنیا کی سب سے بڑی ریڈیو دوربین کی تیاری میں مصروف ہے، جس سے اس نئی دریافت کی گئی ’زمین‘ پر ممکنہ زندگی کی موجودگی کی بابت شواہد اکٹھے کیے جائیں گے۔ بتایا گیا ہے کہ یہ دوربین فٹ بال کے 30 میدانوں کے برابر ہو گی۔ یہ دوربین چینی صوبے گویزاؤ میں قائم کی جا رہی ہے۔ اس دوربین سے آؤٹر سپیس میں چینی مشاہدات میں اضافہ ہو جائے گا۔

چینی سرکاری خبر رساں ادارے سنہوا کے مطابق اس دوربین میں پانچ سو میٹر قطر کے ریفلیکٹر لگائے جا رہیں ہیں، جب کہ 4450 پینلز نصب کیے گئے ہیں۔ ہر پینل کی ایک سطح کی لمبائی 11 میٹر ہے۔

مکمل ہونے پر ’فاسٹ‘ نامی یہ دوربین دنیا کی سب سے بڑی ریڈیو دوربین ہو گی۔ اس سے قبل سب سے بڑی دوربین پوئرٹوریکو کی ارکیبو آبزرویٹری ہے، جو تین سو میٹر قطر کی ہے۔

فاسٹ پروجیکٹ کے سربراہ نان رین ڈونگ کے مطابق، ’یہ ریڈیو ٹیلی اسکوپ سمجھیے کہ ہمارا انتہائی حساس کان ہے، جو کائناتی خلا میں سے ہر طرح کا ریڈیو پیغام سن سکے گا۔ سمجھیے کہ یہ سخت گرج برس کے ماحول میں ایک ٹڈے کی آواز بھی سن پائے گی۔ دوربین جتنی بڑی ہو گی، اتنی ہی کمزور اور باریک آواز یہ سن پائے گی۔‘

خبر رساں اداروں کے مطابق یہ دوربین مجموعی طور پر ڈیڑھ کلومیٹر سے بھی زیادہ بڑے علاقے پر پھیلی ہوئی ہے اور اس دوربین کے گرد ایک چکر لگانے کے لیے 40 منٹ چلنا پڑتا ہے۔ فاسٹ پروجیکٹ کے مطابق اس دوربین کو تین پہاڑی چوٹیاں پر تعمیر کر کے تعمیراتی تکون بنا دی گئی۔

Source

پوسٹ کے متعلق اپنی رائے سے آگاہ کیجئے

ٹیگز: , , , , , ,

تبصرہ لکھيں!

آپ کا يہاں تبصرہ کرنا ممکن ہے، يا پھر آپ اپنی سائٹ سے ٹٹریک بیک کریں اپنی سائیٹ سے. آپ کرسکتے ہیں Comments Feed بذریعہ ار ایس ایس.

اس موضوع پر تبصرہ فرمائيں اور سپام سے اسے محفوظ رکھيں آپ کے ہم نہايت شکر گزار ہيں...

آپ درج ذيل ٹيگز استعمال کرسکتے ہيں

<a href="" title=""> <abbr title=""> <acronym title=""> <b> <blockquote cite=""> <cite> <code> <del datetime=""> <em> <i> <q cite=""> <s> <strike> <strong> 

یہ ایک گریویٹار اینیبلڈ ویب سائیٹ ہے۔ اپنا عالمی سطح پرتسلیم شدہ اوتار حاصل کرنے کے لیے رجسٹر کریں گریوٹار.